BNP News 12.01.2018
* 2013ء کے جعلی حکمرانوں نے اقتدار پر براجمان ہو کر بلوچستان میں لوٹ کھسوٹ، کرپشن، اقرباء پروری، تاریخی کرپشن کرکے بلوچستان کے عوام کو مزید پسماندگی و بدحالی، غربت، افلاس، جہالت کی جانب دھکیلا- حکمران بلوچستان میں حقیقی ترقی و خوشحالی کی بجائے اپنے ذاتی گروہی مفادات کی تکمیل کیلئے سرگرداں رہے-
 

کوئٹہ (پ ر) جعلی حکمرانوں نے چار سالوں میں لوٹ کھسوٹ ، تاریخی کرپشن ، فنڈز کی غیر منصفانہ تقسیم، تعصب پر مبنی تنگ نظری کی سیاست کو فروغ دیا- بلوچستان کو مزید پسماندگی و بدحالی کی جانب دھکیلا-

ان خیالات کا اظہار بی این پی کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات آغا حسن بلوچ ایڈووکیٹ، مرکزی رہنماء غلام نبی مری، جاوید بلوچ، یونس بلوچ، ملک محی الدین لہڑی، حاجی منور علی ہزارہ، ملا مہدی ہزارہ، حاجی فاروق شاہوانی، مہدی تاج ہزارہ، سخی داد محمد ہزارہ، حاجی عالمگیر مینگل، میر محمد اسلم بنگلزئی، کاول خان مری، علی محمد رئیسانی، نعمت بہادری، ابرار، ذاکر حسین ہزارہ نے ہزارہ ٹاؤن میں گفتگو کرتے ہوئے کیا- ملاقات کرنے والوں سے بی این پی قائدین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 2013ء کے جعلی حکمرانوں نے اقتدار پر براجمان ہو کر بلوچستان میں لوٹ کھسوٹ، کرپشن، اقرباء پروری، تاریخی کرپشن کر کے بلوچستان کے عوام کو مزید پسماندگی و بدحالی، غربت، افلاس، جہالت کی جانب دھکیلا- حکمران بلوچستان میں حقیقی ترقی و خوشحالی کی بجائے اپنے ذاتی گروہی مفادات کی تکمیل کیلئے سرگرداں رہے- انہی کی وجہ سے بلوچستان کے مقامی عوام بیروزگاری ، کسمپرسی کا شکار ہوئے جیالوں کو نوکریاں دی گئیں تعصب  کے ذریعے نفرتوں کو ہوا دی گئی حکمران اپنے پارٹیوں تک محدود رہے اور عوام کی خدمت کی بجائے ذاتی مفادات کی تکمیل کیلئے سرگرداں رہے عوام 2018ء کے عام انتخابات میں حکمران کا احتساب کریں حکمران نے ترقی کی تو کرپشن میں بی این پی وطن دوست ، قوم دوست سیاسی قوت ہے جو بلوچوں کے  حقوق کی ضامن اور یہاں پر آباد تمام اقوام کو مسائل سے نجات دہندہ پارٹی ہے آئندہ انتخابات ہماری کامیابیوں کی نوید لے کر آئے گا ہم تعصب ، نفرت سے بالاتر ہو کر عوام کی خدمت کریں گے اور تمام اقوام کے حقوق کا احترام کریں گے انہوں نے کہا کہ آج ہزارہ قوم کے پاس آنے کا مقصد یہی ہے کہ آئندہ چند دنوں میں ہزارہ قوم سمیت دیگر اقوام جو پارٹی میں شمولیت کریں گے ان تک اپنے منشور کو پہنچائیں گے ہم نے ہمیشہ سیاست میں ترقی پسند خیالات کو اہمیت دی ہے ہم روزگاری کی فراہمی ، عوام کی زندگیوں میں مثبت تبدیلیاں لائیں گے پارٹی قائد سردار اختر جان مینگل آج بلوچستان کے تمام اقوام کے ہردلعزیز لیڈر بن چکے ہیں اسی وجہ سے تمام اقوام کے افراد جوق در جوق پارٹی میں شامل ہو رہے ہیں جس سے پارٹی مضبوط و منظم بن چکی ہے عوام نے جعلی حکمرانوں کو رد کر دیا ہے اب ان کی سیاست میں کوئی گنجائش نہیں وہ اخلاقی طور پر اپنی ساکھ کھو بیٹھے ہیں